پوری اُمت مُسلمہ کیلئے ناقابل یقین سرپرائز۔۔۔ سعودی حکومت کا حج سے متعلق فیصلہ، اہم ترین خبر آگئی

Spread the love

ریاض (ویب ڈیسک) سعودی حکومت رواں سال حج کا فیصلہ آج کرے گی جس کا انتظار دنیا بھر میں لاکھوں مسلمانوں کو ہے۔سعودی وزارت حج کے ذرائع کےمطابق حرم پاک میں صفائی کا نظام موثر بنایا گیا ہے۔مسجد الحرام کے تمام داخلی دروازوں پر سپرے کیا جاتا ہے۔ داخلی راستوں پر جدید سینیٹائزر اور اسکیننگ گیٹس لگائے گئے ہیں۔

جو تمام گزرنےوالوں کی اسکیننگ اوروائرس کا شکار لوگوں کی نشاندہی کریں گے۔اس سے قبل وفاقی مذہبی امور نورالح قادری کا یہ بیان بھی سامنے آچکا ہے کہ سعودی حکومت 15 رمضان المبارک تک حج ہونے یا نہ ہونے کا فیصلہ کرے گی۔ سعودی حکومت حج سے متعلق پاکستان سے مشاورت کرکے حتمی فیصلہ کرے گی۔ سعودی وزارت حج نے فی الوقت کوئی بھی معاہدہ کرنے سے روک رکھا ہے۔ذرائع کاکہناہےسعودی عرب میں بھی کوروناکےمتاثرین میں اضافہ ہورہاہے تاہم حرم کومحدود نمازیوں کے لئے کھولا گیاہے۔ واضح رہے کہ یکم مئی کو سعودی حکومت نے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت کے ساتھ مسجد حرام اور مسجد نبوی کو نمازیوں کو لیے کھول دی تھا۔ احتیاطی تدابیر کے تحت حرمین شریفین میں آنے والوں کو جائے نماز ساتھ لانے اور مسجد میں رکھے قرآن پاک کے نسخے استعمال نہ کرنے کا پابند کیا گیا ہے۔سعودی حکومت نے حرمین شریفین کو کھولنے کے لیے احتیاطی تدابیر بھی جاری کردی ہیں جس کے تحت حرمین شریفین میں آنے والوں کو جائے نماز ساتھ لانا ہوگا جب کہ مسجد میں رکھے قرآن پاک کے نسخے استعمال کرنے کی ممانعت ہوگی۔نمازیوں کو فاصلہ برقرار رکھنے کی ہدایت کی گئی ہے جب کہ واش روم بند رکھے جائیں گے، نماز کے لیے آنے والوں کے لیے ماسک پہننا لازمی قرار دیا گیا ہے تاہم ابھی تک عید کی نماز اور نماز تراویح پر پابندی برقرار ہے۔